نئی سم کے اجراءکیلئے بائیومیٹرک ختم، نیا نظام متعارف

جعلی سمز نادرا، پی ٹی اے اور ایف آئی اے کے لئے بڑا چیلنج اور درد سر بن گیا، پی ٹی اے نے سموں کے اجراء کے لئے بائیومیٹرک کی جگہ لائیو فنگر ڈیٹکشن ڈیوائسز متعارف کروانے کا فیصلہ کرلیا ، ملک بھر میں 3 لاکھ سم بائیومیٹرک سینٹرز کو ایل ایف ڈی پر منتقل کیا جائے گا، سم بائیومیٹرک کے نظام کو ایل ایف ڈی پر منتقل کرنے کا کام تیز کردیا ، پاکستان ٹیلی کمیونیکشن کے مطابق ملک بھر میں 3 لاکھ سم بائیومیٹرک سینٹرز کو ایل ایف ڈی پر منتقل کیا جانے کا فیصلہ،جس پر پی ٹی اے نے ٹیلی کام آپریٹرز کو مرحلہ وار ایل ایف ڈی ڈیوائس پر منتقلی کی ہدایت جاری کر دی ہیں موبائل آپریٹرز نے پہلے مرحلے میں بیشتر مقامات پر سم ایل ایف ڈی ڈیوائسز پرتصدیق شروع کردی ہے پی ٹی اے کے مطابق اب تک 7 لاکھ 32 ہزار جعلی سموں کی نشاندہی کی جا چکی ہے 5 لاکھ 80 ہزار ایسی سموں کی نشاندہی ہوئی ہے جو افراد وفات پا چکے ہیں پی ٹی اے کے مطابق جعلی سموں کے اجراء میں موبائل آپریٹرز اور فرنچائزز والے ملوث ہیں ٹیلی کام آپریٹرز کی ایل ایف ڈی ڈیوائسز میں بھی خامیاں موجود ہونے کی نشاندہی پر متعدد شکایت ملی ہیں جو لائیو فنگر ڈکٹیشن میں ناکام ہوئے، بائیومیٹرک نظام کے لئے مشینوں کی خریداری پر بہت اخراجات ہوتے ہیں روز روز نئے نظام کے لئے نئی مشینوں کی خریداری کرنا مشکل ہوگا۔