اسلام آباد؛ سرکاری تعلیمی اداروں کے اساتذہ کا ایک بار پھر کلاسز کا بائیکاٹ

اسلام آباد؛ سرکاری تعلیمی اداروں کے اساتذہ کا ایک بار پھر کلاسز کا بائیکاٹ

وفاقی تعلیمی اداروں کو مئیر کے تحت کیے جانے کے معاملے پر اسلام آباد میں سرکاری تعلیمی اداروں کے اساتذہ نے احتجاجاً ایک بار پھر کلاسز کا بائیکاٹ کردیا ہے جبکہ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز جوائنٹ ایکشن کمیٹی کی جنرل باڈی کے اجلاس کے بعد سرکاری تعلیمی اداروں میں کلاسز کا بائیکاٹ دوسرے روز بھی جاری ہے ذرائع کے مطابق موسم سرما کی چھٹیاں ختم ہونے کے بعد بچے اسکول نہ آسکے گے اساتذہ کا موقف ہے کہ جب تک صدارتی آرڈیننس سے شق 166 و تعلیم سے متعلق دیگر شقیں ختم نہ کی جائیں ہڑتال جاری رہے گی اساتذہ کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان جناب عمران خان صاحب تعلیم سے محبت کرتے ہیں وہ اس کا نوٹس لیں ‌ وائس چیئرمین جیک کا کہنا ہے کہ جب تک بلدیاتی آرڈیننس کی شق 166 ختم نہیں ہوتی احتجاج جاری رہے گا، جنرل باڈی کونسل نے تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل کے مکمل بائیکاٹ کی توثیق کی گئی تھی اجلاس میں حکومت سے یہ بھی مطالبہ کیا گیا ہے کہ 2011 میں یکساں نظام تعلیم کے اپنے فیصلے پر بھی عملدرآمد کروایا جائے اور ہر فورم کی بات مان کر تدریسی عمل دوبارہ شروع کیا وائس چیئرمین جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے مزید کہا ہے کہ اب تدریسی عمل رکنے کی تمام تر ذمہ داری حکومت کی ہے