وزیر خزانہ شوکت ترین کی منی بجٹ میں بعض ترامیم کی ایوان میں شق وار منظوری

وزیر خزانہ شوکت ترین کی منی بجٹ میں بعض ترامیم کی ایوان میں شق وار منظوری 500روپے مالیت کے 200 گرام دودھ کے ڈبے پر جی ایس ٹی نہیں ہوگی اب 500 روپے سے زیادہ مالیت کے فارمولہ دودھ پر 17 فیصد جی ایس ٹی لگے گا

منی بجٹ میں درآمدی گاڑیوں پر ٹیکس بڑھا دیا گیا درآمدی گاڑیوں پر تجویز کردہ 5 فیصد کے بجائے 12.5 فیصد ٹیکس عائد ہوگا تمام درآمدی گاڑیوں پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی بدستور قائم رہے گی مقامی طور پر تیار کردہ 1300 سی سی گاڑیوں پر ڈھائی فیصد ڈیوٹی عائد ہوگی پہلے 1300 سی سی کی مقامی گاڑی پر 5 فیصد ڈیوٹی لگانے کی تجویز تھی 1301سے 2000 سی سی کی مقامی گاڑی پر 10 کے بجائے 5 فیصد ڈیوٹی ہوگی 2001سی سی سے اوپر کی مقامی گاڑی پر 10 فیصد ڈیوٹی عائد ہوگی بچوں کے فارمولہ دودھ پر جی ایس ٹی میں رعایت کر دی گئی لال مرچ اور آئیوڈین ملے نمک پر سیلز ٹیکس ختم کر دیا گیا کھانے پینے کی اشیا پر ٹیکس چھوٹ برقرار رہے گی چھوٹی دکانوں پر بریڈ، نان،چپاتی،شیر مال،بن، رس پر ٹیکس لاگو نہیں ہوگا 1800سی سی کی مقامی اور ہائبرڈ گاڑیوں پر 8.5 فیصد سیلز ٹیکس لاگو ہوگا 1801سے 2500 سی سی کی ہائبرڈ گاڑیوں پر 12.75 فیصد ٹیکس عائد ہوگا درآمدی الیکٹرک گاڑیوں پر 12.5 فیصد ٹیکس عائد ہوگا