بھارت میں عیسائی پادری جنسی زیادتی کے الزام سے بری

بھارت میں عیسائی پادری جنسی زیادتی کے الزام سے بری

بھارت میں رومن کیتھولک عقیدے کے ایک سینئر پادری کو راہبہ سے جنسی زیادتی کے الزام میں بری کر دیا گیا سینئر پادری پر ایک راہبہ کو دو سال کے دوران کئی مرتبہ جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کا الزام عائد تھا بھارتی عدالت نے پادری کو عدم شہادتوں اور ٹھوس ثبوتوں کے نہ ہونے پر آج اس الزام سے بری کر دیاجنوبی بھارتی ریاست کیرالہ کے پادری فرینکو مُلاکل بھارت میں پہلے پادری تھے جن پر جنسی زیادتی کا الزام عائد کیا گیا تھا اور اُنہیں اِس الزام کے تحت عدالتی کارروائی اور پولیس کی فوجداری تفتیش کا سامنا بھی کرنا پڑا تھا اِس الزام کے مطابق وہ 2014ء سے 2016ء تک رومن کیتھولک عقیدے سے وابستہ مشن کے سربراہ تھے اور انہوں نے ایک راہبہ کا کئی مرتبہ جنسی استحصال کیا عدالتی کارروائی کے دوران پادری مُلاکل نے اس الزام کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا تھا