الرجی سے بچنے کے لئے بچوں کی خوراک میں کونسی غذا کا شامل ہونا ضروری ہے؟ تحقیق

الرجی سے بچنے کے لئے بچوں کی خوراک میں کونسی غذا کا شامل ہونا ضروری ہے؟ تحقیق

ایک تحقیق کے مطابق مونگ پھلی اور اس سے تیار کردہ مصنوعات کو نوزائیدہ بچوں کی غذا میں شامل کرنا ان کی بتدریج نشونما میں اضافے اور مختلف الرجیز سے بچنے کا سبب بنتا ہےایک نئی تحقیق کے مطابق ابتدائی زندگی میں بچوں کی خوراک میں مونگ پھلی کو شامل کرنے سے مستقبل میں مختلف الرجیز کو روکنے میں مدد مل سکتی ہےجوکہ مہلک ہوتی ہیں اورعالمی سطح پر نوجوانوں کو متاثر کرتی ہیں محققین کا کہنا ہے کہ مونگ پھلی اور اس سے بنی مصنوعات کو بچوں اور نوزائیدہ بچوں میں متعارف کروانا ان کی بتدریج نشونما میں اضافے مونگ پھلی سے الرجی سمیت مختلف الرجیز سے بچنے کی وجہ بنتی ہیں دی لانسیٹ میں شائع ہونے والے اس مطالعہ میں 146 مونگ پھلی سے الرجی والے بچوں کو شامل کیا گیا جن کی عمریں ایک سے تین کے تھیں اس گروپ میں سے 96 بچوں کو روزانہ مونگ پھلی کا پروٹین پاؤڈر دیا جاتا تھا جس کی خوراک بتدریج چھ مونگ پھلی کے برابر ہوتی ہےجبکہ دوسرے گروپ کے بچوں کو جو کے آٹے کا پلیسبو دیا گیا جو کہ چھ ماہ بعد حساسیت کا شکار ہوئے اور اس میں الرجی کی حد زیادہ تھی جن بچوں کو مونگ پھلی کا پاؤڈر ملا انہوں نے الرجی میں کمی ظاہر کی یعنی اس تھراپی کے ختم ہونے کے چھ ماہ بعد کوئی الرجک رد عمل نہیں ہوااس سے یہ بات واضح ہوئی کہ اگر پیدائش کے چھ ماہ بعد ہی بچوں کو مونگ پھلی سے تیار کردہ مصنوعات کھانے کا عادی کیا جائے تو وہ مونگ پھلی سے ہونے والی الرجی سے متاثر نہیں ہوتے جبکہ ایک سال سے ڈھائی سال کی عمر تک مونگ پھلی نہ کھانے والے بچوں میں مونگ پھلی سے اور دیگر اشیا سے الرجی کی شرح زیادہ ہوتی ہے