خبردار! ان غذائی اشیاء کو کبھی فریج میں نہ رکھیں

خبردار! ان غذائی اشیاء کو کبھی فریج میں نہ رکھیں

کچھ چیزیں ایسی ہیں جنہیں فریج میں رکھنا انہیں خراب رکھنے کے مترادف ہوتا ہے جبکہ وہ کمرے کے عام درجہ حرارت میں زیادہ فریش رہتی ہیں۔کیلے فریج میں کبھی نہیں پکتے بلکہ ان کا چھلکا جلد بھورا یا براﺅن ہوجاتا ہے ،تو انہیں کمرے کے درجہ حرارت میں ہی رکھنا چاہئیے۔یک امریکی تحقیق کے مطابق خربوزوں کو کمرے کے درجہ حرارت میں رکھنا زیادہ بہتر ہوتا ہے اس طرح پھل میں شامل اجزاء جیسے بیٹا کیروٹین وغیرہ بڑھ جاتے ہیں جو صحت مند جلد اور بینائی کے لیے فائدے مند ہوتے ہیں جبکہ فریج کی ٹھنڈی ہوا اینٹی آکسائیڈنٹس کی نشوونما کو ختم کرکے رکھ دیتی ہے۔گرمی پسند کرنے والے بینگن بھی فریج میں جلد خراب ہوجاتے ہیں تو انہیں کمرے کے درجہ حرارت میں محفوظ کرنا چاہئیے۔اس کے علاوہ سرد درجہ حرارت آلو میں پائے جانے والی نشاستہ کو شوگر میں تبدیل کردیتی ہے جس کے نتیجے میں اس کے ذائقے میں ہلکی سی مٹھاس آجاتی ہے۔ آلوﺅں کو 45 فارن ہائیٹ درجہ حرارت میں رکھنا بہترین ہوتا ہے یعنی کسی بھی کاغذ کے تھیلے میں ڈال کر رکھنا کافی ہوتا ہے، سورج کی روشنی میں رکھنا البتہ اسے خراب کرسکتا ہے۔مرچوں کو فریج میں رکھنے سے اس کے فائدے کم ہوجاتے ہیں، اسے کسی ٹھنڈی، خشک اور ہوادار جگہ پر رکھنا زیادہ بہتر ہوتا ہے۔مرچوں کو فریج میں رکھنے سے اس کے فائدے کم ہوجاتے ہیں، اسے کسی ٹھنڈی، خشک اور ہوادار جگہ پر رکھنا زیادہ بہتر ہوتا ہے۔