کراچی دھماکے کے حوالے سے اہم انکشافات، حتمی رپورٹ تیار

کراچی کے علاقے صدر میں گزشتہ رات ہونے والے دھماکے کی حتمی رپورٹ مرتب کرلی گئی ہے جس میں اہم انکشافات ہوئے ہیں۔بم ڈسپوزل اسکواڈ کی جانب سے مرتب کی جانے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دھماکہ سائیکل میں ہوا جو کہ کچرا اٹھانے والی مبینہ افغانی کی سائیکل میں نصب تھا، کچرا اٹھانے والا لڑکا غائب ہے ۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دھماکہ ٹائم ڈیوائس کےذریعے کیا گیا جس میں 2 کلو بارودی مواد اور آدھا کلوبال بیرنگ استعمال کئے گئے ہیں۔رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ماضی میں اس نوعیت کے 2 دھماکے کئے گئے ہین جس میں ایک دھماکہ شیری جناح کالونی اور دوسرا ماڑی پور روڈ پر کیا گیا تھا۔خیال رہے کہ صدر دھماکے میں جاں بحق نوجوان کی شناحت عمر کے نام سے کی گئی ہے جس کی لاش کو رحیم یار خان منتقل کردیا گیا ہے۔مقتول عمر صدیق کراچی میں بزٹہ لائن کا رہائشی تھا جو کہ جناح اسپتال میں ایکسرے کا کورس کر رہا تھا۔علاوہ ازیں دھماکے والے سڑک کو ٹریفک کے لئے بند کردیا گیا ہے جبکہ تفتیشی حکام اطراف کی عمارتوں کی سی سی ٹی وی فوٹیجز جکا جائزہ لے رہے ہیں۔حکام کا کہنا ہے کہ دھماکے کا مقدمہ سی ٹی ڈی میں درج کیا جائیگا۔واضح رہے کہ دھماکے میں زحمی 8 افراد کو اسپتال سے دسثارج کردیا گیا ہے جبکہ 2 افراد تاحال زیر علاج ہیں ۔