احسن اقبال کا ایم ایل 1 منصوبہ پر تشویش کا اظہار

احسن اقبال کا ایم ایل 1 منصوبہ پر تشویش کا اظہار

وفاقی وزیر احسن اقبال نے ایم ایل 1 منصوبہ پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی احسن اقبال کی زیر صدارت ٹرانسپورٹ انفراسٹرکچر پر جوائنٹ ورکنگ گروپ کا اجلاس ہوا جس میں سی پیک اتھارٹی ، این ایچ اے ، گوادر پورٹ اتھارٹی، وزارت ریلوے اور وزارت منصوبہ بندی کے اعلی افسران نے شرکت کی۔وفاقی وزیر نے ایم ایل 1 منصوبہ میں 250 کلومیٹر فی گھنٹہ کے ٹریک کے حوالے سے لاگت کا تخمینہ لگانے کی ہدایت دی جبکہ احسن اقبال نے فائیبر آپٹک کیبل کے منصوبہ کو ایم ایل 1 میں شامل کرنے کی بھی ہدایت دی۔وفاقی وزیر نے کراچی سرکلر ریلوے کو اورنج لائین لاہور کی طرز پر مکمل کرنے کی ہدایت دی جبکہ وفاقی وزیر نے وزارت ریلوے کے حکام کو ایم ایل 1 منصوبہ پر کام کی رفتار تیز کرنے کی بھی ہدایت دی۔وفاقی وزیر نے آئندہ اجلاس میں مانسہرہ تا مظفرآباد ، بابو سر سرنگ اور ژوب تا ڈی آئی خان منصوبوں کو شامل کرنے کی ہدایت دی جبکہ وفاقی وزیر نے این ایچ اے کو کابل پشاور موٹر وے کی فزیبلٹی سٹڈی کرنے کی بھی ہدایت دی۔وفاقی وزیر نے گوادر بندرگا ہ پر ڈریجنگ کا عمل فوری شروع کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی احسن اقبال نے کہا کہ پچھلی حکومت کی غفلت کی وجہ سے گودار بندرگاہ کی گہرائی کم ہو کر 11 میٹر رہ گئی ہے۔احسن اقبال نے یہ بھی کہا کہ جہاز رانی کے لئے بندرگاہ کی گہرائی کم از کم 18 میٹر ہونی چاہیے، نتیجتا بڑے سمندری جہاز گوادر بنررگاہ پر لنگر انداز نہیں ہو سکتے۔وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی احسن اقبال نے مزید کہا کہ وفاقی وزیر احسن اقبال نے ایم ایل 1 منصوبہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایم ایل 1 کا منصوبہ 2018 میں شروع ہونا تھا، التواء سے منصوبے کی مجموعی لاگت میں خاطر خواہ اضافہ ہوگیا ہے۔