شعیب ملک کا اوئن مورگن کو زبردست خراج تحسین

پاکستان کھلاڑی شعیب ملک نے انگلینڈ کے سابق کپتان اوئن مورگن کو زبردست خراج تحسین پیش کیا ہے۔پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شعیب ملک نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ پر حال ہی میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کرنے والے انگلینڈ کے سابق کپتان اوئن مورگن کو زبردست تحسین پیش کیا ہے۔

ان کا ٹوئٹ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ’سچ کہوں تو اوئن مورگن نے 2015 کے بعد وائٹ بال کرکٹ میں انگلینڈ کرکٹ ٹیم کا چہرہ میرے لیے بدل دیا ہے‘۔شعیب ملک کا اوئن مورگن سے متعلق کہنا تھا کہ میری رائے میں اسی کو ہم ایک حقیقی گیم چینجر کہتے ہیں جبکہ انہوں نے اوئن مورگن کے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا بھی اظہار کیا ہے۔واضح رہے کہ انگلینڈ کے سابق کپتان نے حال ہی میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا ہے، ان کا کہنا تھا کہ بہت غور و خوض کے بعد بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے کہا تھا کہ اس میں کوئی شبہ نہیں کہ کیریئر کے سب سے بہترین اور فائدہ مند باب کے بعد یہ فیصلہ لینا آسان نہیں لیکن میں سمجھتا ہوں کہ یہی صحیح وقت ہے فیصلہ کرنے کا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ میرے لیے ذاتی طور پر اور انگلینڈ کی وائٹ بال سائیڈز جس کو میں نے اس مقام تک پہنچایا، دونوں کے لیے یہی بہتر رہے گا کہ میں ریٹائر ہوجاؤں۔خیال رہے کہ اوئن مورگن کی کپتانی میں انگلش ٹیم نے 2019 کا ورلڈ کپ اپنے نام کیا تھا جبکہ ان کی قیادت میں ہی انگلینڈ کی ٹیم ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے کی رینکنگ میں نمبر ون ٹیم پر رہی ہے۔اوئن مورگن کا شمار انگلینڈ میں ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بیٹرز میں ہوتا ہے جبکہ وہ انگلینڈ کی جانب سے 225 ون ڈے اور 115 ٹی ٹوئنٹی میچز کھیل چکے ہیں۔اوئن مورگن نے ون ڈے میچز میں انگلینڈ کی نمائندگی کرتے ہوئے 7701 رنز بنائے ہیں جس میں 14 سنچریاں اور 47 نصف سنچریاں شامل ہیں جبکہ ان کی قیادت میں انگلینڈ نے 126 ون ڈے میچز کھیلے جس میں 76 میچز میں انہیں کامیابی نصیب ہوئی۔علاوہ ازیں انہوں نے انگلینڈ کے لئے 16 ٹیسٹ میچز بھی کھیلے جس میں انہوں نے 2 سنچریوں اور 3 نصف سنچریوں کی مدد سے 700 رنز بنائے ہیں۔مایہ ناز بلے باز 115 ٹی ٹوئنٹی میچز میں 2458 رنز بناچکے ہیں جس میں 14 نصف سنچریاں شامل ہیں جبکہ وہ پی ایس ایل کا حصہ بھی رہ چکے ہیں۔یاد رہے کہ رواں سال 35 سالہ بیٹر کو پرفامنس اور فٹنس کے مسائل کا سامنا رہا ہے جبکہ نیدرلینڈز کے ساتھ حالیہ ون ڈے سیریز کے پہلے دو میچوں میں مورگن صفر پر آؤٹ ہوگئے تھے۔اس تمام صورت حال کے بعد انہوں نے خود ہی تیسرا میچ کھیلنے سے انکار کر دیا تھا جبکہ اس کارکردگی نے انہیں ریٹائرمنٹ لینے پر مجبور کیا ہے۔