ذہنی صحت کے لئے کھانا کھاتے وقت ان 5 عادات کو اپنائیں

یہ بات تو سب ہی جانتے ہیں کہ کھانا ہماری ذہنی، جذباتی اور روحانی صحت میں اہم کردار ادا کرتا ہے ایک طرف تو اس کا براہ راست تعلق اس غذا سے ہے جو کھائی جارہی ہے یعنی وہ جتنی صحت بخش ہوگی اتنی ہی آپ کی صحت بہتر رہے جبکہ دوسری جانب کھانا کھانے کے دوران اختیار کی جانے والی عادات بھی ذہنی صحت پر اثرانداز ہوتی ہیں۔ماہر نفسیات کا کہنا ہے کہ کھانے کھانے یا بنانے کے دوران جس طرح کا رویہ یا عادات کو اختیار کیا جائے گا اس کا براہ راست اثر آپ کے مزاج اور ذہنی صحت پر ہوگا۔ یہاں پر کھانے کے حوالے سے چند ایسی عادات کا ذکر کیا جارہا جوآپ کی ذہنی صحت کو بہتر بنانے میں معاون ثابت ہو سکتی ہے۔
گفتگوکریں
کھانا کھاتے ہوئے آپس میں گفتگوکریں، دن کا احوال بتائیں، آپ نے کیا کیا، کس سے ملے اور دنیا میں کیا ہورہاہے، اس طرح ذہنی تھکان سے نجات مل جائے گی اور کسی حد تک دل کا بوجھ بھی ہلکا ہوگا۔
زیادہ کھانا بنائیں
اس طرح آپ اس کھانے کو دوسروں کے ساتھ شیئر کر سکتے ہیں یا دوسر دن کھانا تیار کرنے کی جھنجھٹ سے آزاد ہوکر دوسرے کاموں کووقت دے سکتے ہیں اس طرح گھر پر کھانا موجود ہوگا تو بے وقت بھوک میں آپ اسے لے سکتے ہیں۔ اس طرح ذہن اس حوالے سے کسی قدر سکون میں رہے گا۔
غلطیوں سے سیکھیں
زندگی کی طرح کھانا پکاتے ہوئے غلطیاں کرنا پھر ان سے سیکھنا ذہنی صحت بڑھانے میں مفید ثابت ہوتا ہے۔ کوشش کریں نت نئی تراکیب سے کھانا تیار کریں اور ایک بار صحیح نہ بنیں تو مایوس ہونے کے بجائے دوبارہ کوشش کریں سیکھنے کا یہ عمل ذہن کی کارکردگی کو بڑھاتا ہے۔
بارچی خانہ کو دوست بنائیں
دنیا میں ایسے لوگوں کی کمی نہیں ہے جو کھانا بنانے سے کتراتے ہیں کیونکہ ان کا کہنا ہے کہ وہ اس کام میں مہارت نہیں رکھتے انہیں یہ بات رکھنی چاہئے کہ کوئی بھی پہلی بار میں ہی بہترین شیف ثابت نہیں ہوتا، آن لائن آسان ترکیبوں سے اس کا آغاز کریں اور دوستوں کے ساتھ اسے شیئر کریں اور سوچیں یہ آپ ان کو تحفہ دیں رہیں ہیں۔

کھانا بنانے سے لطف اندوز ہوں
یہ بات عجیب سی محسوس ہوتی ہے لیکن ہردن تیار ہونے والا کھانا آپ کو مختلف طرح کی خوشی فراہم کرتا ہے اب یہ آپ پر منحصر ہیں کہ آپ اس کی خوشی منائیں یا اسے نظرانداز کریں۔ آپ کا رویہ آپ کے جمود یا ترقی کے مراحل طے کرے گا۔ کوشش کریں کھانا خوش ہو کر بنائیں اوراس سے دوستوں کی تواضع کریں۔