حلیم عادل شیخ کی اپنے خلاف درج مقدمات کالعدم قراردینے کی درخواست دائر

اپوزیشن لیڈر سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ نے اپنے خلاف درج مقدمات کالعدم قرار دینے کی درخواست دائرکردی۔ سندھ ہائی کورٹ میں اپوزیشن لیڈر سندھ اسمبلی اور تحریک انصاف کے رہنما نے دائر درخواست میں مؤقف اپنایا کہ میرے خلاف جامشورو اینٹی کرپشن میں درج کیا گیا تھا۔حلیم عادل شیخ نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ مجھ پرجعلی اور بوگس مقدمات بنائے گئے ہیں۔رہنما تحریک انصاف کی جانب سے درخواست میں یہ بھی مؤقف اپنایا گیا کہ لاہورہائی کورٹ کے آرڈر پر جامشورو میں درج مقدمہ میں انوسسٹی گیشن جوائن کرلی تھی۔درخواست میں یہ بھی کہا گیا کہ سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے کے لیے جھوٹے مقدمات میں ملوث کیا جارہا ہے۔ عدالت سے استدعا ہے میرے خلاف اینٹی کرپشن میں درج مقدمات کالعدم قرار دئیے جائیں۔
واضح رہے کہ عدالت نے حلیم عادل شیخ کو سیکیورٹی فراہم کرنے کے معاملے پروفاقی اور صوبائی سیکریٹری داخلہ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے فریقین سے 25 اگست تک جواب طلب کیا ہے۔

سندھ ہائی کورٹ میں اپوزیشن لیڈرسندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ سے سیکیورٹی واپس لینے کے معاملے پرحلیم عادل شیخ کو 24 گھنٹے میں سیکیورٹی فراہم کرنے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی۔سماعت کے دوران ملک الطاف جاوید ایڈووکیٹ نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ اپوزیشن لیڈر سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ کی جان کو شدید خطرات لاحق ہیں، حلیم عادل شیخ پر کئی بار حملے بھی ہوچکے ہیں۔