عمران خان کی شروع کردہ مرغی پال سکیم دوبارہ شروع

پنجاب حکومت نے سابق وزیراعظم عمران خان کی شروع کردہ ’مرغی پال سکیم‘ دوبارہ شروع کر دی۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق تحریک انصاف کی حکومت کے خاتمے کے بعد راولپنڈی لائیو سٹاک ڈیپارٹمنٹ نے فوری طور پر حکومت کی شروع کردہ مرغی پال، کٹا پال اور کٹا فربہ جیسی سکیمیں بند کر دی تھیں۔ تاہم اتحادی حکومت نے جون میں یہ سکیمیں دوبارہ شروع کر دی تھیں۔رپورٹ کے مطابق حکومت کی طرف سے ان سکیموں پر دی جانے والی سبسڈی میں 50فیصد کمی کر دی گئی۔ مزید برآں لوگوں کی دی جانے والی مرغیوں کی قیمت میں بھی اضافہ کر دیا گیا۔ پنجاب میں تحریک انصاف کی حکومت واپس آنے کے بعد ایک بار پھر مرغی پال سکیم پر تیزی سے کام شروع کر دیا گیا ہے اور حکومت آنے کے پہلے 15دن کے اندر 35ہزار مرغیاں تقسیم کی جا چکی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق تحریک انصاف کی وفاقی حکومت کے دوران جب یہ سکیم شروع کی گئی تھی، تب شہریوں کو 1ہزار 50روپے میں پانچ مرغیوں اور ایک مرغ پر مشتمل سیٹ دیا جا رہا تھا۔ 2021ءمیں اس سیٹ کی قیمت بڑھا کر 1ہزار 140روپے کر دی گئی جو اب مزید بڑھا کر 1ہزار 180روپے کر دی گئی ہے۔