مفتاح اسماعیل نے عمران خان پر کرپشن کے الزامات لگاتے ہوئے پی ٹی آئی والوں سے 5 سوال پوچھ لیے

وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان، ان کی اہلیہ اور اہلیہ کی سہیلی پر کرپشن کے الزامات لگاتے ہوئے پی ٹی آئی کے لوگوں سے پانچ سوالات پوچھ لیے۔مفتاح اسماعیل نے کہا “کیا عمران خان نے ضبط کیے گئے 190 ملین پاؤنڈ اپنی اے ٹی ایم کو واپس نہیں کیے؟ کیا انہوں نے اس کو قوم اور کابینہ سے نہیں چھپایا؟ کیا انہیں اس کے بدلے اس ٹرسٹ کے نام پر سینکڑوں ایکڑ نہیں ملے جس کو وہ خود، ان کی اہلیہ اور فرحان گجر چلاتے ہیں؟ کیا یہ کرپشن نہیں ہے؟”
انہوں نے دوسرا سوال پوچھتے ہوئے کہا “کیا عمران خان نے ای سی ایل پر نام ہونے کے باوجود درجنوں پابندیاں ختم کرکے اسی اے ٹی ایم کو بیرون ملک جانے کی اجازت نہیں دی اور کیا بیگم صاحبہ نے اسی اے ٹی ایم سے اپنی سہیلی فرح گجر کے ذریعے جیولری وصول نہیں کی؟ کیا یہ کرپشن نہیں ہے؟”
مفتاح اسماعیل نے تیسرا سوال پوچھتے ہوئے ٹوئٹر پر لکھا “کیا فرح گجر نے پنجاب میں تقرر و تبادلوں کے عوض رشوت نہیں لی؟ کیا عمران خان اس بارے میں نہیں جانتے؟ کیا انہوں نے اس کرپشن کی اجازت نہیں دی؟ کیا انہوں نے اور ان کی اہلیہ نے اس کرپشن سے فائدہ نہیں اٹھایا؟”
مفتاح اسماعیل نے سوال اٹھایا “کیا عثمان بزدار نے پنجاب میں سیمنٹ پلانٹس کے لائسنس فروخت نہیں کیے؟ کیا عثمان بزدار پنجاب میں لگاتار بھاری کرپشن نہیں کرتے رہے؟ کیا انہوں نے اور ان کی اہلیہ نے اس کرپشن سے فائدہ نہیں اٹھایا؟”
انہوں نے کہا “لاہور میٹرو جتنی لمبائی والی پشاور بی آر ٹی چار گنا زیادہ قیمت میں بنائی گئی ، عمران خان اس میں کرپشن کی تحقیقات رکوانے کیلئے عدالت کیوں گئے؟ کیوں وہ اس پراجیکٹ میں کرپشن کے بارے میں نہیں جاننا چاہتے تھے؟”