بلوچستان؛ طوفانی بارشوں اور سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 180 سے تجاوز کرگئی

بلوچستان میں طوفانی بارشوں اور سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 180 سے تجاوز کرگئی ہے۔تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں بارشیں اور سیلابی صورتحال تاحال برقرار ہے جس کے بعد گزشتہ شب بارشوں سے مزید 6 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں۔پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ صوبے میں کل تک گرج چمک کے ساتھ تیز بارشوں کا امکان ہے جبکہ قلعہ سیف اللہ، لورالائی، بارکھان ،کوہلو اور موسی خیل میں سیلابی صورتحال متوقع ہے۔ پی ڈی ایم اے نے بتایا کہ شیرانی ،سبی، ڈیرہ بگٹی، بولان ،قلات، خضدار، لسبیلہ، آوران، خاران، تربت ،پنجگور، ہرنائی اور سوراب میں بھی سیلابی صورتحال ہو سکتی ہے۔پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ یکم جون سے 6 اگست تک مختلف حادثات میں 176 افراد جاں بحق ہوئے جبکہ جاں بحق ہونے والوں میں 77 مرد، 44 خواتین اور 55 بچے شامل ہیں۔
پی ڈی ایم اے کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ بارشوں کے دوران حادثات کا شکار ہوکر 75 افراد زخمی ہوئے جبکہ زخمیوں میں 48، مرد 11 خواتین اور 16 بچے شامل ہیں۔پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ مجموعی طور پر صوبے بھر میں 18 ہزار 87 مکانات منہدم اور جزوی نقصان پہنچا ہے جبکہ 670 کلو میٹر مشتمل مختلف 6 شاہرائیں شدید متاثر ہوئی ہیں۔پی ڈی ایم اے رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ بارشوں سے 23 ہزار 13 مال مویشی مارے گئے جبکہ مجموعی طور پر 2لاکھ سے زائد ایکڑ زمین پر کھڑی فصلوں کو نقصان پہنچا ہے۔