لڑکیوں کے سیکنڈری اسکول کھولے جائیں، افغان نائب وزیر خارجہ کی اپیل

افغانستان کے نائب وزیر خارجہ شیر محمد عباس ستانکزئی نے طالبان حکومت سے اپیل کی ہے کہ لڑکیوں کے سیکنڈری اسکول کھولے جائیں۔تفصیلات کے مطابق بھارتی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ افغانستان کے نائب وزیر خارجہ نے گزشتہ روز افغانستان میں صرف مردوں پر مشتمل اپنی حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ لڑکیوں کے لیے تمام سیکنڈری اسکولوں کو مزید تاخیر کے بغیر دوبارہ کھول دے۔نائب وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اسلام میں خواتین کی تعلیم پر کوئی پابندی نہیں ہے، طالبان کے نائب وزیر خارجہ شیر محمد عباس ستانکزئی کی یہ اپیل کابل میں طالبان کے ایک اعلیٰ اجتماع کے دوران سامنے آئی۔شیر محمد عباس ستانکزئی نے اس جانب توجہ دلائی کہ اگر اسکول نہ کھولے گئے تو ان بچیوں کے لیے تعلیم کے حصول کا کوئی اور راستہ نہیں ہے، کیونکہ بیشتر کا تعلق ایسے خاندانوں سے ہے جہاں کوئی بھی تعلیم یافتہ نہیں ہے۔وہ کہاں اور کس جگہ پڑھ سکتی ہیں؟