مولی سے کن 5 بیماریوں کا علاج ممکن ہے؟ جانیے

مولی کا شمار زیرِ زمین اگنے والی سبزیوں میں ہوتا ہے جسے نہ صرف پکا کر بلکہ کچا بھی کھایا جاتا ہے۔ ہم میں سے بہت سے لوگ یہ تو جانتے ہیں کہ مولی سلاد کے طور کھائی جاتی ہے لیکن اس بات سے ناواقف ہیں کہ اسے مختلف امراض میں دوا کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا ہے۔
یرقان سے نجات
پیلیا میں مولی کے پتوں کا عرق اور خاص کر سیاہ مولی بہت مفید ثابت ہوتی ہے کیونکہ یہ خون کو صاف کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے اور جگر اور معدے کے لئے دوست کی طرح ہے۔
برص کا علاج
جلد کی ایک ایسی بیماری جسے برص کہا جاتا ہے اس کا علاج مولی کے بیج سے کیا جاتا ہے، مولی کے بیج کو پیس کر سرکہ یا ادرک کے عرق میں ملایا جاتا ہے اور پھر ان حصوں پر لگایا جاتا ہے۔
دمہ اور کھانسی کا علاج
کھانسی ، نزلہ جب بڑھنے لگے تو پھیپھڑوں کو صاف کرنے کے لئے مولی کا استعمال بہت مفید ہے، یہ سانس کے انفیکشن کو جڑ سے ختم کرتی ہے۔
قبض اور بواسیر کا علاج
وہ افراد جنہیں اکثر قبض کی شکایت رہتی ہے وہ مولی اپنی خوراک میں شامل کر لیں، کیونکہ مولی میں دیر سے ہضم ہونے والے کاربو ہائیڈریٹس شامل ہوتے ہیں اور وہ دیر تک جسم کا حصہ بنا رہتا ہے جس کی وجہ سے قبض نہیں ہوتی۔
تیز بخار کا علاج
اگر کسی شخص کو تیز بخار ہو اور اس میں کمی نہ آرہی ہو تو ایسی صورت میں مولی کا رس نکال کر اس میں حسب ضرورت کالا نمک شامل کریں اور کچھ چمچے مریض کو پلائیں، اس عمل سے 15 منٹ میں بخار اتر جائے گا۔

کیٹاگری میں : صحت