عہدہ سنبھالنے کے بعد عبوری وزیر خارجہ مولوی امیر خان متقی کی کابل میں پہلی پریس کانفرنس

عہدہ سنبھالنے کے بعد کابل میں پہلی پریس کانفرنس کرتے ہوئے مولوی امیر خان متقی کا کہنا تھاکہ جن ملکوں نے افغانستان کی مدد کی ان کے شکر گزار ہیں۔

فغانستان کی مدد کرنے والے ملکوں سے تعاون کریں گے، مہاجرین کی واپسی کیلئے بھی کوشش کریں گے۔

وزیر خارجہ نے مطالبہ کیا کہ افغانستان میں نامکمل پراجیکٹس کی تکمیل کیلئے فنڈز بحال کیے جائیں۔مطلوبہ دستاویز رکھنے والے افغان شہریوں کوبیرون ملک سفرکی اجازت ہوگی، ہم تمام افغان عوام کی نمائندگی کرتے ہیں، ملک میں روزگار کے مواقع پیدا کریں گے ۔

عالمی برادری کے حوالے سے عبوری وزیر خارجہ کا کہنا تھاکہ طالبان نے امریکا سمیت غیرملکیوں کے کابل سے انخلا میں بھرپور تعاون کیا لیکن طالبان کی تعریف کے بجائے امریکا نے ہمارے قومی اثاثے منجمد کرکے مشکلات پیدا کیں، امریکا سمیت عالمی برادری کو معلوم ہوناچاہیےکہ انتشارکی پالیسی کارگر نہیں ہوگی۔

Star Asia

اسٹار ایشیا پاکستان کا مقبول نیوز چینل ہے۔

Read Previous

وزیر اوقاف سید سعید الحسن کا داتا گنج بخش ؒ کا978 واں سالانہ عرس مبارک کی تقریبات کو حتمی شکل دینے کے حوالے سے منعقدہ اجلاس سے خطاب

Read Next

وزیراعلیٰ پنجاب کا سابق ایم پی اے ڈاکٹر فائزہ اصغر کے انتقال پر اظہار افسوس