ایران کو ایٹمی ہتھیاروں کے قریب کرنے میں سب سے اہم کردار سابق اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے ادا کیا۔افرائیم ہیلیوی

اسرائیل کے خفیہ و حساس ادارے موساد کے سابق سربراہ افرائیم ہیلیوی کی طرف سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ ایران کو ایٹمی ہتھیاروں کے حصول کے زیادہ قریب لانے میں سب سے اہم و مرکزی کردار سابق اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو  نے ادا کیا ہے۔

زرائع کے مطابق اسرائیل کے مؤقر اخبار ہیرٹز کو دیے گئے ایک خصوصی انٹرویو میں افرائیم ہیلیوی کا اسرائیل کی حکومت کو مشورہ دیتے ہوئے کہنا تھا کہ وہ فلسطین کی مزاحمتی تنظیم حماس کے ساتھ بھی بات چیت کا آغاز کرے۔

خیال رہے کہ سابق اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے پہلے دور حکومت میں وہ موساد کے سربراہ کے طور پر خدمات سر انجام دے چکے ہیں۔

ان کا ایک سوال کے جواب میں ہیرٹز سے کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نیتن یاھو کی بڑی غلطی  یہ تھی کہ انہوں نے ایران کے ساتھ ہونے والے جوہری معاہدے کو سبوتاژ کرنے میں اہم کردار ادا کیا کیونکہ اس کے بعد ایران جوہری ہتھیاروں کے حصول کے زیادہ قریب ہو گیا۔

خیال رہے کہ سابق امریکی صدر بارک اوبامہ کے دور حکومت میں ایران کے ساتھ طے پانے والے جوہری معاہدے سے اس کو نکالنے کے لیے نیتن یاہو کا بہت اہم کردار تھا اور وہ اس کو اپنی کامیابی سمجھتے تھے۔ جس وقت ایران کو جوہری معاہدے سے امریکہ نے نکالا  گیا اس وقت صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی حکومت تھی۔

افرائیم ہیلیوی کے مطابق اس حوالے سے انہوں نے بہت سوچ بچار کی ہے اور وہ اسی نتیجے پر پہنچے ہیں کہ وہ ان کی بہت بڑی غلطی تھی تاہم انہوں نے یہ واضح نہیں کیا کہ اب اس غلطی کا خمیازہ کیسے اور کس صورت میں بھگتنا پڑے گا؟

اسرائیلی خفیہ ایجنسی موساد کے سابق سربراہ کا کہنا تھا کہ اگر ہم معاہدے سے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دستبردار ہونے کے بعد پیش آنے والے حالات کا بغور جائزہ لیں تو یہ حقیقت ظاہر ہو گی کہ ایران کے خلاف اس کے بعد صورتحال زیادہ خراب ہوئی ہے۔

ہیرٹز کے استفسار پر افرائیم ہیلیوی کا کہنا تھا کہ اب تو خود اسرائیلی حکمران کہہ رہے ہیں کہ ایران جوہری ہتھیاروں کے حصول کی دوڑ میں اس وقت جتنا زیادہ قریب پہنچ چکا ہے اتنا پہلے کبھی  بھی نہیں تھا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اس سے بڑا اور کیا ثبوت ہو سکتا ہے کہ آپ کی سابقہ پالیسیاں بلکل ہی غلط تھیں اور حکمت عملی  بھی ناقص تھی۔

ان کا  خبردار کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اسرائیل کے سابق وزیراعظم نیتن یاہو کی یہ ناکامی تاریخی ناکامی میں بھی تبدیل ہو سکتی ہے۔

starasianews

Read Previous

چئیرمین نیب کی توسیع کا نوٹی فکیشن جاری کرنے میں حکومت تذبذب کا شکار

Read Next

پاکستان باآسانی ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں بھارت کو اپ سیٹ کرسکتا ہے :لانس کلوزنر